Jump to content
URDU FUN CLUB

DR KHAN

Co Administrators
  • Content Count

    10,897
  • Joined

  • Last visited

  • Days Won

    1,335

DR KHAN last won the day on January 22

DR KHAN had the most liked content!

Community Reputation

20,610

About DR KHAN

  • Rank
    Best Writer

Identity Verification

  • Gender
    Male

Recent Profile Visitors

68,180 profile views
  1. جناب ایسا نہ کروں تو کون پڑھے گا ہمیں؟ یہی تو کرنا ہوتا ہے کہ کہاں کوئی دھاگہ باہر چھوڑنا ہے تاکہ دوسری طرف سے کبھی اس کو کھینچا جائے۔
  2. آگے آنے والے دنوں میں اس کہانی میں کیا کیا ہونے والا ہے وہ اگر آ لوگ بھانپ لیں تو دل تھام لیں۔ خاص طور پہ مولوی صاحب تو کمال ہی کر دیں گے۔ ان کے مزاج،عادات،بول چال اور سیکس میں جو تبدیلی آئے گی وہ دھمال ڈال دے گی۔
  3. دیکھیں اس طرح کی کہانیاں زیادہ تر سنی سنائی ہو سکتی ہیں یا اکثر مردوں کی فینٹسی۔ مگر یہ کم ہی ہوتا ہے کہ لڑکی کو سیکس کرنا ہواور اس کے لیے کسی مرد کو اغوا کرنا پڑے۔اس کو چودنے والے بہت مل جائیں گے۔ بہرحال یہ واقعہ میں نے بھی بارہابار مختلف جگہوں پہ وقوع پذیر ہوتا سنا یا پڑھا۔مگر اس کی حقیقت پہ ہمیشہ شبہ ہی رہا۔ اب تک میں صرف چند ہی ایسے واقعات کو سچ میں جانتا ہوں کہ کسی مرد کا متعدد خواتین کے ساتھ ایسا تعلق رہا جہاں انھوں نے سیکس کے لیے مجبور کیا تھا۔
  4. یہ کہانیاں ہم صدیوں سے سن رہے ہیں کہ امیرزادیاں بندے اٹھا لیتی ہیں۔ اس میں کوئی خاص حقیقت نظر نہیں آتی۔ان کو اپنے سرکل میں اپنے جیسے کافی مل جاتے ہیں۔ان کو اپنے سے نیچے آنے کی ضرورت ہی نہیں پڑتی۔ مگر ایسا بھی ہو جایا کرتا ہے کہ طبقاتی فرق سے نیچے آ کر کوئی معاشقہ چلا لے۔یہ کہانیاں اکثر سامنے آجاتی ہیں۔ ہمارا بولی وڈ اسی سے بھرا ہوا ہے۔ ماضی کی ہر فلم کی سٹوری یہی ہوتی تھی۔ امیر اور غریب کی محبت پر ہزاروں فلمیں بنی ہوئی ہیں۔ جہاں تک اس بات کا تعلق ہے کہ سیکس کرتی ہیں امیرزادیاں تو ہر انسان کی سیکس کی وجہ بڑی الگ ہوتی ہے۔ کسی کو محبت میں چاہیے،کسی کو صرف چند پیسوں کے بدلے بھی کرنے میں کوئی مسئلہ نہیں۔ کال گرل جو ہے وہ ہزار 500 میں کرنے کے لیے تیار ہوتی ہیں،وجہ سیکس کا محرک پیسہ ہے۔ ایک شریف لڑکی جس نے کسی مرد کا منہ تک نہیں دیکھا ہوتا اچانک پہلی ملاقات میں شلوار اتار دیتی ہے کیونکہ سیکس کا محرک نکاح ہے اس کے لیے۔ نکاح جو بھی کر لے گا چاہے ناپسند ہی کیوں نہ ہو وہ چپ چاپ سیکس کروا لے گی۔ ایسے ہی ایسی لڑکیاں ہوتی ہیں جن کے لیے سیکس کسی خاص جذبے کی تسکین کا ذریعہ ہوتا ہے۔ لوگ اس کو حسرت یا ہمیشہ ترستے ہوئے دیکھیں اس کے لیے بھی سیکس کر سکتی ہیں۔ وہ جس کو جب چاہے سیکس سے نواز سکتی ہیں۔ میں ایک لڑکی کو جانتا تھا جس سے کوئی بندہ ہلکا سا بھی میٹھے بول یا ہمدردی کی بات کرتا تھا تو وہ بڑی آسانی سے مان جاتی تھی۔پتہ نہیں کتنے بندوں نے اس سے فیض حاصل کیا۔
  5. اپڈیٹ قریب قریب مکمل ہو چکی ہے۔ جلد پوسٹ کر دی جائے گی۔
  6. تاحال پلان یہی ہے کہ اس کو پیڈ کر دیا جائے،کسی مرحلے پہ۔ مگر نظرثانی کی جا سکتی ہے مگر اس کا وعدہ نہیں کر سکتے۔
  7. ہمیں اس میں بری طرح ناکامی ہوئی تھی کیونکہ کسی نے بھی اس کو کلک کر کے دیکھنا گوارہ نہیں کیا تھا اور پورے مہینے کی ارننگ دو چار ڈالر سے اوپر نہیں تھی۔ اب جبکہ سائیٹ ماہانہ سو ڈالر سے زیادہ اخراجات کرتی ہے تو سوچ لیں کہ کتنے ایڈز ہونے چاہیئں۔ بہرحال یہ بات درست ہے کہ اگر ممبرمثبت رسپانس دیں،کہانی چوری نہ کی جائے اور یہاں کی کہانیوں سے اپنے ذاتی گروپس نہ چلائے جائیں تو سائیٹ کے فری سیکشن بہتر کیے جا سکتے ہیں۔ اس کے لیے ایک اہم چیز نئے رائیٹرز بھی ہیں۔نئے رائیٹرز اگر سامنے آئیں اور اپنی کہانیاں لکھیں تو بات بن سکتی ہے۔فری سیکشن میں اگر وہ اپنی کہانیاں شائع کریں تو فورم بہتر ہو سکتا ہے،مگر اکثریت کہانیوں کو دسیوں جگہ پہ پوسٹ کرنے پہ بضد ہوتی ہے۔ اس سے رائیٹر کے ساتھ ساتھ کہانی کی بھی ویلیو ختم ہو جاتی ہے۔
×
×
  • Create New...
DMCA.com Protection Status